وزیراعظم عمران خان اور پرویز الہیٰ کے درمیان آج اہم ملاقات کا امکان 118

وزیراعظم عمران خان اور پرویز الہیٰ کے درمیان آج اہم ملاقات کا امکان

اسپیکر قومی اسمبلی کے مطابق وزیراعظم اور عمران خان کے درمیان اہم ملاقات آج اسلام آباد میں ہوگی۔

اسد قیصر کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان اور اسپیکر پنجاب اسمبلی کے درمیان اتوار کو ہونے والی اہم ملاقات میں تحریک عدم اعتماد اور دیگر سیاسی صورت حال پر بات چیت ہوگی۔ قومی اسمبلی کے اجلاس سے متعلق اسپیکر کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس جلد بلائیں گے، عدم اعتماد کی تحریک میں عالمی قوتیں ملوث ہیں۔

کوئی قانون قرآن و سنت کے خلاف نہیں بن سکتا, اسد قیصر

صوابی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان کے عوامی مفاد سب سے پہلے ہیں، عمران خان پہلی مرتبہ آزاد خارجہ پالیسی لائے ہیں۔ پاکستان ایک آزآد و خودمختار ملک ہے۔ سب دنیا کے ساتھ برابری کے ساتھ تعلقات ہونگے۔ ہم کسی کی ڈکٹیشن نہیں لینگے۔

انہوں نے کہا کہ عدم اعتماد لانا اپوزیشن کا حق ہے، عدم اعتماد کی تحریک میں عالمی قوتیں ملوث ہیں، لیکن پاکستان تحریک انصاف کے ایم این اے و اتحادی عمران خان کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑے ہیں، قومی اسمبلی کا اجلاس جلد طلب کرینگے۔

دوسری جانب وفاقی دارالحکومت میں بنتی سیاسی صورت حال ہر گزرتے دن کے ساتھ تبدیل ہو رہی ہے۔ مسلم لیگ ق نے وزیراعظم سے ملاقات کی تردید کردی ہے۔ ق لیگ کے رہنما کامل علی آغا نے واضح کیا ہے کہ ق لیگ قیادت کی کل وزیراعظم سے کوئی ملاقات نہیں ہورہی ہے۔

کامل علی آغا نے کہا کہ نہ ہی چوہدری پرویز الٰہی اور مونس الٰہی اتوار کے روز 13 مارچ کو وزیراعظم سے ملاقات کر رہے ہیں، اور نہ ہی اس حوالے سے کوئی شیڈول تیار یا رابطہ ہوا ہے۔

اس سے قبل وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے ووٹ خریدنے کا بازار گرم رکھا ہے، اپوزیشن نے بلیک میلنگ شروع کی ہوئی ہے، اپوزیشن جتنا مرضی پیسے لگائے، وزیر اعظم عمران خان 5 سال پورے کریں گے۔

واضح رہے کہ چند روز قبل اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی اور وفاقی وزیر برائے آبی وسائل مونس الٰہی سے وفاقی وزراء فواد چوہدری اور فرخ حبیب نے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ وزیراعظم عمران خان نے دورہ لاہور کے موقع پر اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الٰہی کو پیکا آرڈیننس کے حوالے سے معاملات سلجھانے کا ٹاسک دیا تھا۔

ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد حسین نے کہا تھا پرویز الٰہی سے سیاسی صورت حال پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔ چوہدری فواد حسین نے کہا کہ مستقبل میں جو بھی بڑے فیصلے ہونے ہیں اس پر مسلم لیگ (ق) اور پی ٹی آئی ایک ہی پلیٹ فارم پر ہیں اور جو تحفظات ہیں وہ کافی حد تک دور کر دئیے ہیں اور باقی بھی دور کر دیں گے اور عدم اعتماد کا اجلاس بلانے سے قبل تمام اتحادی وزیراعظم پر اعتماد کا باضابطہ اعلان کر دیں گے جس سے موجودہ صورتحال ختم ہو جائے گی۔

پرویز الٰہی ، مونس الٰہی سے فواد چودھری ،فرخ حبیب کی ملاقات 
انہوں نے کہا کہ یہ اس لئے بھی ضروری ہے کہ 23 مارچ پر تقریباً 40 سے زائد ممالک کے وزرائے خارجہ، 200 سے زائد وفود اور دیگر اہم ممالک کے وزرائے خارجہ پاکستان آ رہے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ یہ سیاسی صورت حال اس تقریب سے پہلے ختم ہو جائے اور امید ہے کہ اتحادیوں کی طرف سے وزیراعظم پر اعتماد کا باضابطہ اعلان جلد ہو جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ق) حکومت کے ساتھ ہے، وہ کابینہ کا حصہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں ایک انار 100بیمار والا حال ہے، انشااللہ سب کو مطمئن کریں گے اور آپ دیکھیں گے کہ معاملہ افہام و تفہیم کے ساتھ حل ہو۔






Source link

Bilal Sharif
Author: Bilal Sharif

Muhammad Bilal is senior columnist and writer||Studied as Electrical Engineer at Bahauddin Zakariya University|| Former Employee at Fatima Fertilizer Company Limited, Sadiqabad, FFCL||currintely working KEPCO KPS

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں