101

خود اعتمادی کے لیے ان پانچ چیزوں پر عمل کریں

کیا آپ بھی اس بات پر اتفاق نہیں کریں گے کہ ایسے بہت سے لوگ آپ کو ارد گرد نظر آئیں گے جو اعلی تعلیم یافتہ ہے یا بڑے عہدے پر فائض ہیں لیکن پھر بھی ان کی شخصیت میں کچھ کمی ضرور محسوس ہوتی ہے؟ غور کریں تو پتہ چلے گا کہ وہ خود اعتمادی سے محروم ہیں ۔خود اعتمادی یا  سیلف کانفیڈنس ہر انسان کے لئے زندگی کی سب سے اہم ضرورت  میں سے  ہے ۔کیونکہ ہمارے اندر کا اعتماد ہی ہمیں دوسروں سے ممتاز کرتا ہے ۔

ہم جتنا زیادہ پراعتماد ہوں گے اتنا زیادہ دوسروں سے زیادہ کام کرنے اور آگے بڑھنے کے لئے تیار رہیں گے۔ یاد رکھیے خود اعتمادی ایک ذہنی معاملہ ہے جیسے ہم اپنے جسم کے اضلاع  کو کسی سخت کام کے لیے ورزش کراتے ہیں ۔ایسے ہی ذہن کے مسلز کو بھی ورزش کی ضرورت پڑتی ہے دوستو اگر آپ اس   تحریر میں دیے گئے پانچ طریقوں پر عمل کر لیں تو یقین جانیے آپ وہ خود اعتمادی حاصل کر سکتے ہیں جو دنیا  کے کامیاب ترین لوگوں کا طرہ امتیازہے

۔ 1خود اعتمادی آپ کے اندر کا معاملہ ہے

اس لیے سب سے پہلے آپ کو اپنی سوچ کو بدلنا ہوگی جو سوچ آپ کو احساس کمتری میں مبتلا کئے ہوئے ہیں۔ اس کی جگہ خود اعتمادی پیدا کرنے والی سوچ اختیار کیجیے۔ اگر آپ اب تک اپنی خامیوں اور کمزوریوں کے بارے میں سوچتے رہے ہیں ۔تو آج سے اپنی خوبیوں کے بارے میں سوچنا شروع کر دیجیئے۔ روزانہ کچھ وقت کے لئے ان تمام کاموں کا تصور کیجیے ۔جو آپ خود خوب اچھی طرح کر سکتے ہیں مثبت سوچ  زندگی میں اعلی اقدار لاتی ہے  اعلی اور بلند تر اقدار  خود اعتمادی پیدا کرتے ہیں ۔

۔2زیادہ خود اعتماد لوگ اپنی زندگی میں زیادہ بڑے گولز پر کام کرتے ہیں

آپ کی خود اعتمادی اور آپ کے مقاصد حیات کا براہ راست تعلق ہے ۔ آپ کے مقاصداور گولز  واضح اور  بڑے ہوں گے اور آپ ان پر فوکس کریں گے توآپ کا اعتماد بھی بڑھے گا۔لاء آف اٹریکشن کہتا ہے کہ ایک  جیسی  چیزیں ایک دوسرے کو کشش کرتی ہیں۔

 لہذا  جب زیادہ پر اعتماد لوگ جب اپنے بڑے اہداف  پر فوکس کرتے ہیں تو انہیں ویسے ہی افراد، آئیڈیاز، حالات اور مواقع کم ملتے  چلے جاتے ہیں ۔اگلے بارہ ماہ کے لئے دس آداب اہداف  طے کیجیے ۔ایک نوٹ بک لے کر یہ گولز  روزانہ کم از کم ایک بار توضرور لکھیے۔ یو ںآپ کو اپنے اہداف پر توجہ رکھنے میں مدد ملے گی اور کشش کے قانون کے تحت آپ ان اہداف  سے بھرپور خوداعتماد سے کشش کرنے لگیں گے ۔

۔3 کہاوت مشہور ہے کہ جس کا کام اسی کو ساجھے  

جی ہاں خود اعتماد افراد وہی کام کرتے ہیں جو وہ خوب اچھی طرح کر سکتے ہیں ۔اگر آپ سب کچھ  کرنا چاہتے ہیں۔ تو یاد رکھئے آپ کچھ بھی نہیں کر سکتے۔ہر  کام کو کرنے سے آپ خوداعتماد بھی نہیں ملے گا۔ خوداعتماد کے لیے  تیسرہ اقدام  مہارت ہے ۔

آپ کے اندر دو تین کام کرنے کا شوق پیدائشی طور پر موجود ہے۔وہ لوگ بہت ہی  خوش قسمت ہوتے ہیں جو اپنی زندگی کا مقصد تلاش کر لیتےہیں ،سب سے پہلے اپنے دل کی چاہت کو کو جئے یعنی وہ خاص کام کیا ہے جو شاید آپ صرف آپ کر سکتے ہیں پھر اس کام کی مدد سے اپنے اہداف کی  تکمیل کیجئے ۔رفتہ رفتہ  آپ کا تجربہ بڑھے گا تو آپ اس کے ماہر ہوتے جائیں گے۔

ایک سوال پورا مستقبل اپنے آپ سے پوچھ لیتے رہئیےکہ کیا یہ کام میرے وقت اور توانائی کا بہترین استعمال ہے ؟اس آپ اس  یہ یقین نہیں کرتے جو آپ دیکھتے ہیں بلکہ   اسے دیکھتے ہیں جس پر آپ کے یقین رکھتے ہیں۔ آپ کی یقین آپ کی زندگی کی حقیقت کی تخلیق کرتے ہیں ۔

آئیے میں آپ کو ایک کاروباری کی دلچسپ کہانی سناؤں ۔یہ کاروباری  ایک مرتبہ شدید کاروباری مسائل کا شکار ہویہا ں تک کہ وہ بالکل مایوس ہوگیا۔ ایک شام وہ پارک میں تنہا بیٹھا تھا کہ ایک بوڑھا اس کے پاس آیا ۔اس نے کاروباری سے اس کی پریشانی کی وجہ پوچھی۔

بوڑھے  کو جب پتہ چلا کہ وہ سخت مالی مسائل کا شکار ہے تو اس نے اپنی جیب سے پانچ لاکھ ڈالر کا چیک نکال کر کاروباری کو دیا اور کہا کہ ٹھیک ایک سال بعد اس جگہ ملنا اور یہ رقم مجھے واپس کر دینا ۔کاروباری کو اتنی رقم ملی تو اسے اعتماد ہوا کہ وہ کے وہ اپنا کام دوبارہ شروع کر سکتا ہے۔

اگر ا سے نقصان ہوا تو وہ چیک کیش کرا کے اپنی ضرورت پوری کرلے  گا ۔1سال تک اس نے خوب محنت کی اور پیسہ کمایا  اور  یہاں تک کی اپنا بزنس دوبارہ کھڑا کر لیا۔ ایک سال بعد وہ کاروباری دوبارہ سے پار  ک گیا تو اسے پتہ چلا کہ جس پوری نہیں اسے چیک دیا تھا وہ تو پاگل ہے اور پاگل خانے سے بھاگ کر یہاں آ نکلا تھا ۔

کاروبار کو پانچ لاکھ ڈالر ہونے کا یقینی سے وہ  اعتماددے گیا کہ جس کے ذریعے اس نے اپنا تباہ شدہ کاروبار دوبارہ کھڑا کر لیا۔ اپنے تمام اعتماد  کا جائزہ لیجئے ۔جو یقین آپ کی خود اعتمادی میں رکاوٹ ہے انہیں چھوڑ دیجئے جو یقین آپ کی خوداعتمادی بڑھانے والے ہیں انہیں اختیار کیجئے اور ہر روز انہیں قوی سے قوی تر کرتے جائیں۔

۔ 5 اپنے اہداف کے حصول کے لیے ہر ممکن قدم اٹھائیں

ایک دفعہ کا اقدام کافی نہیں ہوتا کیونکہ پہلی مرتبہ کی کوشش اکثر ناکام ہوتی ہے لیکن جو جو عمل کرتے ہیں ناکامی کا امکان گھٹتا جاتاہے ۔مشہور کتاب تھنک اینڈ ریچ گرو کا مصنف کہتا ہے کہ زندگی میں کامیابی ملنے سے پہلے آدمی کے لیے ضروری ہے کہ وہ عارضی شکستوں اور ناکامیوں سے ملاقات کرے۔

یہ حقیقت قبول کیجئے کہ مسائل ضروری ہے ان سے بچا نہیں جا سکتا۔ ہاں انہیں حل ضرور کیا جا سکتا ہے جان لیجئے کہ آپ کو کبھی نہیں رکنا کیوں کہ آپ بھرپور خود اعتمادکے مالک ہیں ۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں