afghan taliban 78

افغان طالبان اور پاکستان ۔۔

افغان طالبان کے افغانستان کاکنٹرول سنمبھالنے سے پاکستان کو کیا فائدہ اور کیا نقصان ہو سکتا ہے ۔ایک طویل عرصہ جنگ کرنے کے بعد اور عالمی طاقتوں کو شکست دینے کے بعد طالبان ایک بار پھر مکمل عروج کے ساتھ افغانستان کا کنٹرول سنمبھالنے میں خاطر خواہکامیابیاں حاصل کر چکے ہیں ۔

جو کہ کم ازکم پاکستان کے لئے بہت ہی خوش آئند بات ہے ۔ طالبان کا افغانستان پر مکمل کنٹرول نہ صرف افغانستانمیں امن لائے گا بلکہ پاکستان میں بھی امن لائے گا، ۔ہمارے ہمسایہ اور روائیتی حریف ملک بھارت کے لئے ایک برا خواب ہے َ۔

جو افغانستانسے ہوکر پاکستان میں دہشتگردی کی کاروائیاں کرواتا تھا ،اب بالکل بھی نہیں کروا پائے گا، کیونکہ طالبان نے یے اعلان کیا ہے کہ ہم اپنے ملک کی سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونےکے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے ۔

انڈین خفیہ ایجنسی را اور افغان ایجنسی این ڈی ایس ملکر جو پاکستان میں کاروائیاں کرواتے تھے سرحد پار کے خفیہ اڈوں سے حملے کروا کر پاک فوج کے جوانوں کو شہید کیاجاتا تھا،پاکستان کو ان سب کاروائیوں سے کافی حد تک نجات ملے گی ۔

افغانستان میں بیٹھ کر جو عالمی طاقتیں دہشتگردوں کے ڈوریاں ہلاتی تھی، اور ملک میں پی ٹی ایم یا اس جیسی ملک دشمن قوتوں متحرک کرتی تھی ۔جس کی وجہ سے پاکستان میں بدامنی اور انتشار پھیلتا تھا۔

اگر افغانستان کا مکمل طور پر کنٹرول طالبان کے پاس چلا جائے تو یقینی طور پر پاکستان میں بدامنی اور انتشار پھیلانے والے عناصر کو بھی لگام ڈالی جاسکتی ہے،اور سب سے بڑھ کر افغان بارڈر سے جو غیر قانونی طور پر تجارت ہوتی تھی پاکستان میں اس پر کنٹرول ہوگا ۔

اور ہمارے روائیتی حریف ملک ہندوستان کی کھربوں کی انویسمنٹ جو کے ہمیں نیچا دکھانے کے لئے کی گئی تھی ضائع جائے گی ،اور اگر ہماری طالبان کے ساتھ بھائی چارے کی فضا قائم رہی تو (سی پیک )کو بھی بہت فائدہ پہنچے گا اور ہم افغانستان کے زریعے اور افغانستان ہمارے زریعے اپنی معیشت کو ایک نمایاں مقام کر لاکر کھڑا کر سکتا ہے۔

اور اس کے بعد ہم افغان سرحد پر بے فکر ہونے کے بعد اپنی باقی سرحدوں کی حفاظت صحیح طریقے سے کر سکیں گے ،صوبہ خیبر پختونخواہ گلگت بلتستان اور بلوچستان سندھ جہاں بھی علیدگی پسند اور شر پسند ہیں۔

ان عناصر پر کنٹرول حاصل کر سکیں گے، بارڈر بار سے اگر دراندازی بند ہوگی تو پاکستان کو اندرونی معاملات کو کنٹرول کرنے میں آسانی ہوگی ، پڑوسی ملک بھارت اور افغانستان کی موجودہ بوکھلائی ہوئی اشرف غنی حکومت جوکہ ٹوٹلی انڈین ایجنسی را اور امریکہ کے آشیرباد سے قائم تھی سخت بوکھلائے ہوئے ہیں اور انتہائی اوچھے قسم کے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں۔

اشرف غنی حکومت بار بار افغان امن عمل کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کر رہی ہے ،پاکستان پر طالبان کی مدد کا الزام لگانا اور پھر اس کے بعد افغان سفیر کی بیٹی کے جھوٹے اغوا کا ڈرامہ سازش کا حصہ ہے لیکن یے لوگ جو مرضی کر لیں طالبان افغانستان کے فاتح ہیںاور پاکستان عمران خان کی قیادت میں انشاء اللہ تمام سازشوں اور سازشی عناصر پر قابو پا لے گا ، اللہ ہمارے ملک کو دشمن کی سازشوں سے بچائے اور مستقبل قریب ترقی اور خوشحالی پاکستان اور افغانستان کا مقدر بنا دے ، اور سازشی عناصر کو شکست فاش ہو ، آمین ۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں