امریکا میں مسلسل تیسری سہ ماہی کے دوران شرح سود میں اضافہ 15

امریکا میں مسلسل تیسری سہ ماہی کے دوران شرح سود میں اضافہ

امریکا میں مسلسل تیسری سہ ماہی کے دوران شرح سود میں اضافہ

نیو یارک (92 نیوز) – امریکا میں مسلسل تیسری سہ ماہی کے دوران شرح سود میں اضافہ و گیا جس سے سرمایہ کار خوف زدہ ہو گئے۔

امریکا  میں شرح  سود  میں 3.25 فیصد اضافہ   نے کساد بازاری  کے خطرے کی گھنٹی  بجا  دی ۔ ہانگ کانگ  کے وزیر خزانہ   نے  رواں سال  کے آخر تک منفی جی ڈی پی  اور کساد بازاری کا الارم بجا دیا ۔

امریکا کے  مرکزی بینک  کے چیئرمین   جیروم پاول کی  نیوز کانفرنس  کے بعد  عالمی  مارکیٹوں  میں مندی  کا رجحان غالب آ گیا ۔ خام تیل   کی    قیمت  90 ڈالر  فی  بیرل  پر مستحکم  رہی  ۔

امریکی  اسٹاک  مارکیٹ میں  ڈاؤ جونز انڈسٹریل  انڈیکس 522 پوائنٹس  تک  گر گیا ۔ ٹوکیو اور  ہانگ کانگ اسٹاک مارکیٹوں  میں اڑھائی  سو  سے  زائد  پوائنٹس کی  مندی  دیکھی  گئی ۔ یورپی  اسٹاک مارکیٹوں  میں فیوچر ٹریڈنگ  میں دو فیصد   کی  کمی ہوئی ۔

ادھر  جنوبی کوریا کی کرنسی وان  ڈالر  کے مقابلے  میں 13 سال کی  کم  ترین سطح پر آگئی ۔ جنوبی کورین وآن 1400 کی نفسیاتی   حد  سے گر  گیا ۔ اس  طرح ڈالر کے مقابلے  میں یورو 20 سال کی کم ترین سطح  پر آگیا۔ ایک یورو 0.9807 ڈالرکی  سطح  پرفروخت ہوا۔



Source

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں