pm holding cabinet meeting 60

کھاد کی دستیابی: وزیراعظم کا ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کارروائی کا حکم

وزیر اعظم نے ملک میں کھادوں کے موجودہ اسٹاک اور قیمتوں کے بارے میں جائزہ اجلاس کی صدارت کی۔

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کی ہدایت کی ہے جب انہیں بتایا گیا تھا کہ کھادوں کے ذخیرہ اندوزی کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات سے ملک میں ان کی قیمتوں میں 400 روپے فی بوری کی کمی ہوئی ہے۔

پیر کو وزیراعظم کی زیر صدارت ملک میں کھاد کے موجودہ اسٹاک اور قیمتوں سے متعلق جائزہ اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزراء اسد عمر، خسرو بختیار، فخر امام، مشیر خزانہ شوکت ترین اور سینئر افسران نے شرکت کی۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ کھاد کی قیمت فروخت میں اوسطاً 400 روپے فی بوری کمی آئی ہے۔

وزیراعظم کو یہ بھی بتایا گیا کہ کھاد کی فراہمی کی نگرانی کے لیے ایک آن لائن پورٹل قائم کیا گیا ہے جس کے ذریعے صوبے اور ضلعی انتظامیہ کھاد کی نقل و حرکت اور اسٹاک کی نگرانی کر سکتے ہیں۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے اجلاس کو بتایا کہ 13 نومبر سے کھاد کے ذخیرہ اندوزی کو روکنے کے لیے متعدد اقدامات کیے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اقدامات میں 347 ایف آئی آر درج اور 244 گرفتاریاں شامل ہیں۔

ذخیرہ اندوزی کو چیک کرنے کی ہدایت کے بعد کھاد کی قیمتوواضح طور پر کم ہو گئی ہے

انہوں نے مزید بتایا کہ 21 ہزار 111 انسپکشنز کیے گئے، 480 گودام سیل کیے گئے اور 2.79 کروڑ روپے کے جرمانے کیے گئے۔

اس کے علاوہ ہر ضلع میں کنٹرول روم قائم کیے گئے ہیں جہاں کھاد کی قلت، ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری سے متعلق شکایات درج کرائی جا سکیں گی۔

سمگلنگ کی روک تھام کے لیے بین الصوبائی سرحدوں پر چوکیاں قائم کی گئی ہیں۔

وزیر اعظم کو مزید بتایا گیا کہ ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے خلاف متعلقہ قوانین میں ترامیم کی جا رہی ہیں

وزیراعظم نے ہدایت کی کہ ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری میں ملوث افراد کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں