expolosion in bhawalnagr during ashur 64

بہاول نگر میں یوم عاشور کے دن دھماکہ

بہاولنگر (خبریں ڈیلی) یوم عاشورہ کے جلوس کے دوران دھماکے میں 2 افراد جاں بحق ، 20 سے زائد زخمی ہوئے۔پنجاب کے وزیر داخلہ راجہ بشارت نے بتایا کہ جمعرات کو بہاولنگر میں عاشورہ کے جلوس کے دوران ہونے والے دھماکے میں کم از کم دو افراد ہلاک اور 20 سے زائد زخمی ہوئے۔

روز نامہ خبریں ڈیلی سے بات کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ ایک شخص نے صبح 10 بجے کے قریب بہاولنگر میں مہاجر کالونی میں جامع مسجد سے گزرنے والے جلوس پر دستی بم پھینکا ، مزید کہا کہ حملہ آور کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

وزیر قانون راجہ نشارت نے بتایا کہ دھماکے میں ہلاک ہونے والے دو افراد کے علاوہ دو زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے اور بہاولپور کے وکٹوریہ ہسپتال میں زیر علاج ہیں۔اس کے علاوہ تمام زخمیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ علاقے میں رینجرز تعینات کر دی گئی ہے جبکہ مزید تفتیش جاری ہے۔

اس سے قبل سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیوز میں پولیس اور ایمبولینسیں جائے وقوعہ کی طرف دوڑتی ہوئی دکھائی دے رہی ہیں۔ مزید برآں زخمی شہری سڑک کے کنارے مدد کے منتظر دکھائے۔

شیعہ رہنما خاور شفقت نے پریس کانفرنسکرت ہوئےبتایا کہ دھماکہ اس وقت ہوا جب جلوس شہر کے مہاجر کالونی محلے سے گزر رہا تھا۔

انہوں نے اس حملے کی مذمت کی اور حکومت پر زور دیا کہ وہ عاشورہ کے جلوسوں میں سیکورٹی کو مزید بڑھا دے ، جو ملک کے دیگر حصوں میں بھی جاری ہیں۔

حکام نے عاشورہ کے دوران سیکورٹی وجوہات کی بنا پر ملک بھر میں موبائل فون سروس معطل کردی تھی۔

سینیٹر سحر کامران نے بھی مذمت جاری کرتے ہوئے اسے “کریکر اٹیک” قرار دیا اور زخمیوں کی صحت یابی کے لیے دعا کی۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں