leaders eat last by simon sinek 71

بہترین لیڈر بننے کے لیے یہ چار اوصاف اپنائیں

اگر آپ ایک کامیاب لیڈر بننا چاہتے ہیں اگر آپ اپنی زندگی کے کسی بھی شعبے میں بہترین لیڈر انہ صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنا چاہتے ہیں اگر آپ خود کو دنیا کے بہترین لیڈرز میں شمار کرنا چاہتے ہیں تو آج کی تحریر آپ کے لئے ہے جی ہاں بالکل آج کی تحریر میں ہم آپ سے بات کریں گے سائمن سینک کی شہر آفاک کتاب لیڈرز اعیٹ لاسٹ کے بارے میں سائمن سینک ایک مشہور بریٹش امریکہ مصنف ہیں اور ایک انسپائریشنل اسپیکر کی حیثیت سے جانے جاتے ہیں اب تک وہ پانچ کتب تصانیف کر چکے ہیں۔

جو ان کی شہرت کا باعث بنی 2014 میں مشہور مصنف سائمن سینک نے ایک کتاب شائع کی جس میں قارئین کو اپنی انفرادی اور اجتماعی زیادتی اور پروفیشنل زندگی میں دوسرے لوگوں کو ساتھ لے کر چلنے کے بہترین گر بیان کیے گئے۔ اس کتاب میں واضح کیا گیا ہے کہ اعلیٰ لیڈرشپ کا تصور صرف لوگوں کو اچھے طریقے سے مینج کرنا ہی نہیں بلکہ دوسروں کو ایک پر سکول اپنائیت سے بھرپور اور محفوظ ماحول فراہم کرنا ہے۔

مصنف کے مطابق اگر آپ کے عمل اور رویے دوسروں کو زیادہ خواب دیکھنے ،زیادہ سیکھنے ،بہتر طریقے سے کام کرنے اور اپنے اہداف کو مثبت انداز سے پورا کرنے کے لیے ابھارتےہیں۔ تو آپ ایک لیڈر ہیں اور آپ میں قائدانہ صلاحیتیں موجود ہیں۔

اس بات کی وضاحت کے لئے مصنف دنیا کی تمام بڑی اورگنائزیشن کا ذکر کرتا ہے جواپنے ملازمین کو اپنی کارکردگی دکھانے کے لئے بہترین ماحول فراہم کیا جاتا ہے مثال کےطور پر گوگل ،مائیکرو سوفٹ ایپل وغیرہ یہاں افراد کو اپنی رائے کا اظہار کرنے اور اپنے کام کو احسن طریقے سے سرانجام دینے کی بھرپور آسانی حاصل ہے۔

جس کے نتیجے میں افراد ادارے سے اپنائیت محسوس کرتے ہیں اور اپنی پرفارمینس کا 100% دینے کی کوشش کرتے ہیں ۔ایک ریسرچ کے مطابق دباؤ اور پریشانی کا زیادہ انحصار کام کی بجائے کمزور مینجمنٹ اور لیڈرشپ پر ہے۔

بالکل اسی طرح ورکرز کی اچھی کارکردگی کا انحصار بہت حد تک اچھی ایڈمسٹریشن پر بھی ہوتا ہے۔ یاد رہے کہ ایک بہترین لیڈر کا کام صرف آفس اور کسی تنظیم تک محدود نہیں بلکہ یہ کہنا زیادہ مناسب ہوگا کے لیڈر شپ ایک اختیاری فعل ہے۔ اور کسی بھی عہدے پر رہتے ہوئے دوسروں کی خدمت اور رہنمائی پر منحصر ہے یہاں اگر ہم گھریلو زندگی کی مثال دیں تو بچے اپنے والد سے محبت کرتے ہیں ۔چاہے وہ ساری رات کام کی وجہ سے باہر رہیں۔

برعکس اس والد کے جلدی گھر آ جائے اور نہ خوش رہے، اپنائیت اور تحفظ کا احساس نہ دیکھ سکے مصنف نے اپنی کتاب میں لیڈر شپ کے چار بنیادی اوصاف کا ذکر کیا ہے جیسا کہ ایک لیڈر شپ ذمہ داری قبول کرنے کا نام ہے ایک اچھا لیڈر ہمہ وقت اپنی لوگوں کی مدد کے لیے تیار رہتا ہے ایک اچھا لیڈر نمبرز کی پرواہ کیے بغیر اپنے لوگوں کی بنیادی حقوق کا خیال رکھنا اپنا فرض سمجھتا ہے۔

لیڈر بننے کے لئے بڑے کاموں کی طرح اپنے چھوٹے کاموں کو بھی احسن طریقے سے ادا کرنا بھی ضروری ہے۔ جیسا کہ ذہن بدھسٹ کہتے ہیں کہ جس طرح تم ایک چھوٹاکام کرتے ہو بالکل اسی طرح تم اپنے باقی بڑےکام بھی کرتے ہو لہذا لیڈرشپ کا تنظیم اور تعظیم سے گہرا تعلق ہےجو ایک لیڈر کی ہر معاملے میں مدد کرتی ہے۔

لیڈرشپ کی مہارت ایک شخص کے کردار پر مشتمل ہے اور ایک فرد کے کردار کے بارے میں اندازہ اس کے دوسروں کے ساتھ رویے سے باآسانی لگایا جاسکتا ہے۔ بالخصوص ایک بہترین لیڈر اپنے لوگوں کے لیے اپنے مفادات چھوڑنے کے لیے ہر وقت تیار رہتا ہے۔ اور کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرتا۔ پھروہ چاہے وہ وقت ہو،طاقت ہو یا قوت ہو ، پیسہ یا اثرورسوخ ہو یہاں تک کہ اپنی پلیٹ کا کھانا تک کیوں نہ ہو۔

اس دعوے کی تائید امریکہ بحریہ کی لیفٹیننٹ جنرل جارج فلینٹ اس طرح کرتے ہیں۔ لیڈرشپ کی قیمت اپنے ذاتی مفاد کو پس پشت ڈالنا ہے۔ دوسرے لفظوں میں لیڈرشپ کا مطلب صحیح قابل عمل اور پائیدار مستقل حل تلاش کرنا ہوتا ہے۔ نہ کہ وقتی فوائد کو مقدم جاننا ہے۔ یہ وہ اصول ہیں جو لیڈر اور اسکی ٹیم کے درمیان اعتماد اور ہم آنگی کی وجہ بنتے ہیں۔ اس طرح ٹیم کے تمام افراد نہ صرف ایک دوسرے پر اعتماد کرتے ہیں بلکہ ایک دوسرے کے تعمیری کردار کی بھلائی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

یہاں مصنف کا یہ کہنا بالکل بجا ہے کہ ایک ذہین فرد اپنی ہدایت سے لوگوں کو ذہین نہیں بناتا بلکہ ذہین لوگ ایک فرد کی قیادت میں اس طرح کام کرتے ہیں کہ اسے ذہین و فطین ثابت کرتے ہیں۔ بلاشبہ تاریخ میں موجود وہ تنظیمیں جنہوں نے مشکل حالات کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور کامیابیاں سمیٹیں۔ ان سب کے پاس ایک بہترین قیادت موجود تھی۔ ایک اچھے لیڈر کے لیے بہترین اخلاق کا تقاضا یہی ہے کہ لیڈر کے قول و فعل اس کے شعوری احکامات اور کوششوں سے متصادم نہ ہوں۔ کیوں نہ ہم عہد کریں کہ ہم اپنی زندگیوں میں ایک ایسا لیڈر بننےکی کوشش کریں جس کی توقع ہم دوسروں سے رکھتے ہیں۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں