grouping b/w sultan mehmood and illyas 76

آزاد کشمیر میں پی ٹی آئی حکومت آغاز میں ہی دھڑے بندی کا شکار

ذرائع کے مطابق آزاد کشمیر حکومت کو کابینہ کی تشکیل میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔آزاد کشمیر میں پی ٹی آئی حکومت کابینہ کی تشکیل سے قبل ہی دو دھڑوں میں واضح تقسیم ہوتے نظر آتی ہے۔

ذرائع کے مطابق کابینہ کی تشکیل کا اختیار آزاد کشمیر کی قیادت کو نہ ملنے پر آزاد کشمیر حکومت میں تشویش کی لہر دوڑ نظر آتی ہے۔ سردار تنویر الیاس اور بیرسٹر سلطان محمود کی زیر صدارت علیحدہ علیحدہ ارکان اسمبلی کے اجلاس ہوئے ہیں۔

تنویر الیاس کی زیر صدارت اجلاس میں سپیکر قانون ساز اسمبلی سمیت سینئر ارکان نے شرکت کی ہے۔ دوسری جانب بیرسٹر سلطان محمود نے بھی اپنے ہم خیال ارکان کے ساتھ ایک اجلاس کیا ہے جس میں تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔

بیرسٹر سلطان محمود کی زیر صدارت اجلاس میں زیادہ وزارتیں اپنے ہم خیال گروپ کو دلوانے کی حکمت عملی طے کی گئی ہے۔ تنویر الیاس کے اجلاس میں بھی اپنے لوگوں کو شامل کرنے کی حکمت عملی بنائی گئی ہے۔

وزارتوں کی تقسیم پر آزاد کشمیر کی سینئر قیادت کو اعتماد میں نہ لے جانے پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔ وزارتوں کی تقسیم کشمیر حکومت اور وزیراعظم کا اختیار ہے۔ اجلاس میں شریک ارکان قانون ساز اسمبلی کا کہنا تھاکہ وزارتوں کی تقسیم کا فیصلہ اگر ارکان کو اعتماد میں لیے بغیر کیا گیا تو اس کو قبول نہیں کیا جاۓ گا۔

پی ٹی آئی آزاد کشمیر میں دو گروپوں واضح طور پر نظر آتے ہیں جن میں ایک گروپ بیرسٹر سلطان محمود جوکہ پی ٹی آئی آزاد کشمیر کے صدر ہیں دوسرا گروپ سردار تنویر الیاس کاہے دونوں گروپ اپنے اپنے ارکان کو وزارتیں دلوانے کے لیے کوشاں ہیں۔ جس کی وجہ سے پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت کو فیصلے کرنے میں دشواری کا سامنا ہے

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں