Pakistani-students-in-ukraine 111

جنگ زدہ یوکرین سے بڑی تعداد میں پاکستانیوں کا انخلا

یوکرین میں پاکستانی سفارت خانے نے ملک کے اہم شہروں پر روسی افواج کے حملوں کے بعد مشکل صورتحال کے باوجود بڑی تعداد میں پھنسے ہوئے پاکستانی طلباء اور شہریوں کو بحفاظت نکال لیا ہے۔

یوکرین میں پاکستان کے سفیر ڈاکٹر نول اسرائیل کھوکھر نے اپنے ٹوئٹر ہینڈل پر ایک صوتی پیغام میں کہا کہ یوکرین میں تقریباً 3000 طلباء موجود ہیں اور ان میں سے زیادہ تر کو بحفاظت نکال لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جنگ زدہ ملک میں 500 سے 600 کے قریب رہ گئے ہیں اور سفارت خانہ انہیں بحفاظت نکالنے کے لیے کارروائی میں ہے۔ سفیر نے کہا کہ وہ یوکرین میں آزمائشوں اور مشکلات کے باوجود بھرپور کوششیں کر رہے ہیں۔

“تمام پاکستانی محفوظ ہیں اور ہم مشکل حالات میں ان کی رہنمائی کرنے کی کوشش کر رہے ہیں،” کھوکھر نے پروازوں کی بندش، بینکنگ سسٹم اور ٹرانسپورٹ اور ایندھن کی عدم دستیابی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا۔

ان تمام مشکلات کے باوجود، انہوں نے کہا کہ انہوں نے زیادہ تر طلباء کو نکال لیا ہے اور باقی چند کو نکالنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔ “ہم طلباء کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں،” انہوں نے مزید کہا۔

تازہ ترین تفصیلات بتاتے ہوئے سفیر نے کہا کہ سفارت خانے کے عملے کے 21 افراد خاندان سمیت کل 62 افراد کو پہلے ہی نکالا جا چکا ہے جب کہ 59 افراد یوکرین-پولینڈ بارڈر کراسنگ پر موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ مزید 79 افراد جن میں 67 طلباء اور سفارت خانے کے عملے کے 12 خاندان کے افراد شامل ہیں یوکرین-پولینڈ کی سرحد پر جا رہے تھے۔ کھرکیو سے 104 طلباء کا ایک گروپ ٹرین کے ذریعے پہنچ رہا تھا جبکہ 20 دیگر طلباء کو سفارت خانے کی طرف سے ترتیب دی گئی بس میں کیف سے نکالا جا رہا تھا۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں