mzah ngari 47

ناصر محمود ملک صاحب کی مزاح نگاری پر شائع ہونے والی کتاب ”مزاح کبیرہ“ کی تقریب رونمائی

لطیفہ پڑھ کر ہم لطف اندوزہوتے ہیں۔بظاہر یہی لگتا ہے کہ الفاظ کاچناؤ کرکے قاری کو ہنسانے کی کوشش کی جارہی ہے لیکن یہ اتنا بھی آسان نہیں ہے۔مزاح نگاری وہ کام ہے جس کو انتہائی سنجیدگی کے ساتھ کیا جاتا ہے۔مزاح کے پیچھے درد ہوتا ہے۔

مزاح نگار جب معاشرے میں موجودناپسندیدہ رویوں اور بنیادی مسائل کی تکلیف کا سامنا کرتا ہے تو پھر اپنے اس درد کو وہ مزاح کے پیرائے میں لکھتا ہے اورہنسانے کے ساتھ ساتھ وہ قاری کو ایک بہترین سبق بھی دے جاتا ہے۔ایک ماہر مزاح نگاروہی ہوتا ہے جو ادب واقدار کے دائرے میں رہتے ہوئے اپنے فن ظرافت کو قاری کے دِل میں اتار دے۔

ناصر محمود ملک صاحب کا شمار بھی ان حیرت انگیز شخصیات میں ہوتا ہے جو پولیس جیسے حساس محکمے میں اپنے فرائض سرانجام دینے کے ساتھ ساتھ مزاح نگاری بھی کرتے ہیں اور بہتر ین انداز میں کرتے ہیں۔ان کی نئی شائع ہونے والی کتاب”مزاح کبیرہ“ بھی ایسے ہی بہترین مزاحیہ مضامین کا مجموعہ ہے۔اس کتاب کی تقریب رونمائی 14جولائی کو قاسم علی شاہ فاؤنڈیشن میں منعقد ہوئی، جس میں علم و ادب اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔

اس خصوصی تقریب میں محترم عطاء الحق قاسمی صاحب (مزاح نگار،کالم نگار)،محترم طاہر انوار پاشاصاحب (ریٹائرڈIGپولیس،مصنف)،محترم حسین شیرازی صاحب (نامور ادیب)،محترم اشفاق احمدوِرک صاحب(معروف کالم نگار) اور محترم قاسم علی شاہ صاحب نے اپنے خیالات کااظہار کیا اور کتاب کے مصنف ناصر محمود ملک صاحب کو ایک بہترین کتاب لکھنے پر مبارک باد دی گئی۔پروگرام کے اختتام پر تما م مہمانوں کے لیے پرتکلف چائے کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔

وسیم عباس
Author: وسیم عباس

وسیم عباس فری لانسر , جرنلسٹ , وی لاگر , کالم نگار , سوشل میڈیا ایکٹویسٹ ,خبریں ڈیلی کے ساتھ بطور ایڈمن منسلک ہیں انکا ٹویٹر اکاونٹ[email protected] کے ہینڈل سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں